دلچسپ و عجیب

دنیا کے سفاک ترین حکمران

دنیا کی تاریخ میں کئی ایسے بدنام اور سفاک لیڈر گزرے ہیں جن کے مظالم کی داستانیں اگر پڑھی جائیں تو انسان کے رونگھٹے کھڑے ہوجاتے ہیں- ان بدنام زمانہ لیڈروں کے ظلم و بربریت کے اثرات آج کی دنیا میں بھی محسوس کیے جاسکتے ہیں- آج اپنے پیج کے دوستوں کو تاریخ کے چند بدنام ترین لیڈروں کے بارے میں بتاتے ہیں جو کہ لاکھوں افراد کے قتل کے ذمہ دار ہیں۔
11۔Queen Ranaavalona I of Madagascar
یہ مڈغاسکر کی سب سے پہلی ملکہ تھی- 1828 سے 1868 کے درمیان اس ملکہ نےتقریبا 2.5 ملین سے بھی زائد افراد کو قتل کروایا- آج دنیا اسے ایک شیطانی ملکہ کے طور پر جانتی ہے- یہ لوگوں سے جبری مشقت کرواتی تھی ۔ انکار پر قتل کی سزا تھی۔ مڈغاسکر کی آبادی 1833 میں50 لاکھ تھی جو کہ1839ء میں اس ملکہ کی سفاکیت کی وجہ سے کم ہوکر 25 لاکھ رہ گئی۔
10۔ Nero – Roman Emperor
یہ ایک رومن شہنشاہ تھا جس نے صرف 14 سال حکومت کی- لیکن اس مختصر دورِ حکومت میں بھی وہ خواتین کی عصمت دری٬ لاتعداد خاندانوں کے قتل اور شہروں کی جلانے کا ذمہ دار جا ٹھہرا-
9۔Attila The Hun
یہ ایک انتہائی بےرحم اور قاتل لیڈر تھا اور اس کے اپنے لوگ بھی اس لیڈر کی خون کی پیاس سے ڈرتے تھے- یہ تاریخ کا ایک ظالم ترین لیڈر تھا-اس کو بھی لاکھوں لوگوں کی موت کا ذمہ دار قرار دیا جاتا ہے۔
8۔Ivan The Terrible
یہ روس کا پہلا حکمران تھا- اس نے لیتھونیا٬ پولینڈ اور سوئیڈن کے خلاف 24 سالہ طویل ترین جنگ کا آغاز کیا تھا- کہا جاتا ہے کہ یہ روزانہ 500 سے 1000 کسانوں کو جمع کرتا اور انہیں تشدد کا نشانہ بنواتا اور اکثر کو مروا دیتا- اس دوران یہ حکمران اور اس کا بیٹا اس پرتشدد نظارے سے محظوظ ہوتے- حقیقی معنوں میں یہ ایک خوفناک لیڈر تھا-
7۔Leopold II
یہ 1865 سے 1909 تک بیلجیم کا بادشاہ رہا- اس کی شہرت کی سب سے بڑی وجہ کانگو کی آزاد ریاست کی تخلیق ہے جہاں جبری مشقت٬ غلامی اور عصمت دری عام کی گئی- ایک اندازے کے مطابق اس نے کانگو کے 3 سے 15 ملین افراد قتل کروائے-
6۔Hulagu Khan
یہ چنگیز خان کا پوتا تھا اور منگول لیڈر تھا- اس نے بغداد کا خاتمہ کردیا تھا- ایک ہفتے پر مشتمل شہر کی اس تباہی کے دوران تقریبا 10 لاکھ سے بھی زائد افراد قتل کیے گئے-
5۔Harry Truman
یہ امریکہ کا 33واں صدر تھا اور یہی وہ شخص تھا جس نے پہلی بار ہیروشیما اور ناگاساکی پر ایٹم بم گرانے کے احکامات جاری کیے- اس طرح صرف چند سیکنڈ میں 2 لاکھ افراد قتل کردیے گئے- اس ایٹم بم کے اثرات ان علاقوں میں آج بھی محسوس کیے جاسکتے ہیں-
4۔Kim II Sung
شمالی کوریا کے اس حکمران کو 1.6 ملین سے بھی زائد افراد کا قاتل قرار دیا جاتا ہے جو کہ اس کے اپنے ملک کے باشندے تھے- اس حکمران نے ظلم و بربریت کی یہ داستانیں پورے ملک میں رقم کیں-
3۔Hideki Tojo
درحقیقت یہ جاپانی فوج کا ایک جنرل تھا- یہ شخص اس وقت اپنے ملک کے چلتے ہوئے سسٹم سے خوش نہیں تھا اس لیے جنرل نے وزیراعظم کی سیٹ اور دیگر ذمہ داریاں اور پوزیشن اپنے ہاتھ میں لینے کا فیصلہ کیا- تاہم اس تمام عمل میں یہ جنرل 5 ملین سے بھی زائد افراد کے قتل کا ذمہ دار ٹھہرا-
2۔ہٹلر
ہٹلر جرمنی کا مقبول ترین لیڈر تھا ۔تاریخ انسانی کی یہ شخصیت جمہوری طریقہ سے منتخب ہوکر ڈکٹیٹر کے درجہ پر فائز ہوا۔یہ دوسری جنگ عظیم کا سب سے اہم کردار تھا۔ اس کا جنگی جنون اور مغرور رانہ پہلو لاکھوں لوگوں کی اموات کا سبب بنا۔ اس جنگ میں مجموعی طور پر تقریبا 6 سے 8 کروڑ افراد ہلاک ہوئے۔تاریخ انسانی کی بدترین شخصیتوں میں ہٹلر کا شمار ہوتاہے، 1945میں ہٹلر کے خاتمہ کے بعد شاید ہی کسی ماں نے اپنے بچہ کا نام ہٹلر رکھا ہو۔
1۔ جوزف سٹالن
جوزف اسٹالن 1924ء میں ولادیمیر لینن کی وفات کے بعد سوویت اتحاد کا سربراہ بنا۔1930ء کی دہائی کے اواخر میں اسٹالن نے ‘عظیم صفائی’ (Great Purge) کا آغاز کیا جسے ‘عظیم دہشت’ (Great Terror) بھی کہا جاتا ہے، جو اشتراکی جماعت کو ان افراد سے پاک صاف کرنے کی مہم تھی جو بد عنوانی، دہشت گردی یا غداری یا اس کے خلاف ھے؛ اسٹا لن نے اس مہم کو عسکری حلقوں اور سوویت معاشرے کے دیگر شعبوں تک توسیع دی۔ اس مہم کا نشانہ بننے والے افراد کو عام طور پر قتل کر دیا جاتا یا جبری مشقت کے کیمپوں (گولاگ) میں قید کر دیا جاتا یا پھر وہ جلاوطنی کا سامنا کرتے۔اس دور میں لاکھوں لوگوں کوظالمانہ طریقے سے قتل کیا گیا۔1939ء میں اسٹالن کی زیر قیادت سوویت اتحاد نے نازی جرمنی کے ساتھ عدم جارحیت کا معاہدہ کیا جس کے بعد پولینڈ، فن لینڈ، بالٹک ریاستوں، بیسربیا اور شمالی بوکووینا میں روس نے جارحانہ پیش قدمی کی۔پولینڈ پر قبضے کے بعد روس کی فوج نے اسٹالن کے حکم سے ایک ہی رات میں 10 ہزار پولینڈ کے فوجی آفسروں کو ویران جنگل میں گولی مار کر ہلاک کردیا۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Urdu Empire