26 Best Urdu Poetry on Eyes in Urdu Text & Roman Urdu – آنکھوں پر اردو شاعری

Best Urdu Poetry on Eyes in Urdu Text & Roman Urdu - آنکھوں پر اردو شاعری

Introduction

Eyes hold a special place in the poetic tradition of Urdu literature. Eyes, or “آنکھیں” in Urdu, provide a canvas for poets to explore human emotions.

In Urdu poetry, eyes symbolize a window to the soul, reflecting love, longing, and the depths of emotion.

In this post, I’ve shared 22 pieces of Urdu poetry on eyes in Urdu text as well as in Roman Urdu along with their images.

So, let’s explore how Urdu poets have beautifully composed eyes shayari in Urdu to express the many emotions raised by a single glance.

Best Urdu Poetry in Urdu

جی بھر کے اسے جاتے ہوئے دیکھنے تو دے اے آنکھ ٹھر جا تجھے رونے کی پڑی ہے

جی بھر کے اسے جاتے ہوئے دیکھنے تو دے
اے آنکھ ٹھر جا! تجھے رونے کی پڑی ہے

Jee bhar ke use jaate huye dekhne to day
Ae aankh thar ja, tujhe rone ki pari hai

بادل تو بہت ہیں، مگر اس شہر میں ہم نے آنکھوں کے سوا کچھ بھی برستے نہیں دیکھا

بادل تو بہت ہیں، مگر اس شہر میں ہم نے
آنکھوں کے سوا کچھ بھی برستے نہیں دیکھا

Baadal to bohat hain magar is sheher mein hum nay
Aankhon ke siwa kuch bhi barastay nahi dekha

رونے کی سَزا ہے نہ رلانے کی سزا ہے

رونے کی  سَزا ہے نہ رلانے کی سزا ہے
یہ رسم الفت نبھانے کی سزا ہے
نکلتے ہیں جو یہ آنکھ سے آنسو
کسی کو بے تحاشا چاہنے کی سزا ہے

Rone ki saza hai na rulane ki saza hai
Yeh rasam-e-mohabbat nibhane ki saza hai
Nikalte hain jo ye aankh se aansoo
Kisi ko be tahasha chahnay ki saza hai

تُو کہاں ڈھونڈتا پھرتا ہے میری چشمِ تر زندگی آنکھ کے پانی سے بہت آگے ہے

تُو کہاں ڈھونڈتا پھرتا ہے میری چشمِ تر
زندگی آنکھ کے پانی سے بہت آگے ہے

Tu kahan dhundta phirta hai meri chashm-e-tar
Zindagi aankh ke paani se bohat agay hai

تجھے بھلانا نہیں ممکن اس کا تقاضا نہ کیا کر آنکھیں اندھی بھی ہوجائیں تو آنسو رکا نہیں

تجھے بھلانا نہیں ممکن اس کا تقاضا نہ کیا کر
آنکھیں اندھی بھی ہوجائیں تو آنسو رکا نہیں کرتے

Tujhe bhulana nahi mumkin is ka taqaza na kiya kar
Aankhen andhi bhi ho jaien to aansu ruka nahi karty

مختصر وضاحت

یہ شعر غم اور مایوسی کا اظہار کرتا ہے۔ یہ ایک ایسے شخص کے جذبات کو بیان کرتا ہے جس نے اپنی زندگی کی محبت کو کھو دیا ہے۔

یہ شعر ایک ایسے شخص کے جذبات کا ایک طاقتور اور متحرک اظہار ہے جس نے اپنے محبوب کو کھو دیا ہے۔ غم، مایوسی، اور نقصان کے جذبات کو بیان کرتا ہے۔”تجھے بھلانا نہیں ممکن۔” کا مطلب یہ ہے کہ اپنے محبوب کو بھلانا بہت مشکل ہے۔

کبھی کبھار حالات بہت برے ہو جاتے ہیں، آنسو انسانی جذبات کا اظہار ہیں، اور وہ کبھی بھی رکتے نہیں۔ حتیٰ کہ اگر کوئی شخص بالکل اندھا ہو جائے، تو بھی انسو کبھی بہنا بند نہیں ہوتے۔ 

اس سے ہمیں یہ سیکھنے کو ملتا ہے کہ حالات کتنے بھی سخت کیوں نہ ہوں، انسانی جذبات کی قدر کرنی چاہئے اور انہیں قابو میں رکھنا چاہئے۔

Also Read: Munafiq Poetry in Urdu About Munafiq Dost & Log (With Images)

ہم سے ملتے ہیں تو ملتے ہیں جھکا کر آنکھیں نہ جانے کس کے لئیے رکھتے ہیں سجا کر آنکھیں

ہم سے ملتے ہیں تو ملتے ہیں جھکا کر آنکھیں
نہ جانے کس کے لئیے رکھتے ہیں سجا کر آنکھیں

Hum se miltay hain to milte hain jhuka kar aankhein
Na jaane kis ke liye rakhte hain saja kar aankhein

مجھے جو آنکھ سے اوجھل دکھائی دیتا ہے

مجھے جو آنکھ سے اوجھل دکھائی دیتا ہے
وہ چُپ رہے بھی تو مجھ کو سنائی دیتا ہے
تمہارے قدموں میں رکھ دی شاعری اپنی
کسی کو کون یوں اپنی کمائی دیتا ہے

Mujhe jo aankh se ojhal dikhai deta hai
Woh chup rahe bhi to mujh ko sunai deta hai
Tumhare qadamo mein rakh di shaayari apni
Kisi ko koun yun apni kamaai deta hai

مُدتوں روئیں گی وہ آنکھیں ہمیں بھولنے کو مُدتوں ہم تیرے اشکوں میں پائے جائیں گے

مُدتوں روئیں گی وہ آنکھیں ہمیں بھولنے کو
مُدتوں ہم تیرے اشکوں میں پائے جائیں گے

Muddaton roain gi woh aankhein humein bhoolne ko
Muddaton hum tere aansuon mein paaye jayenge

یہ سوچ کے نظریں ملاتا ہی نہیں کہ آنکھیں کہیں جذبات کا اظہار نہ کر دیں

یہ سوچ کے نظریں ملاتا ہی نہیں
کہ آنکھیں کہیں جذبات کا اظہار نہ کردیں

Yeh soch ke nazarain milata hi nahi,
Kay aankhein kahin jazbat ka izhaar na kar dein

آگ سورج میں ہوتی ہے، جلنا زمین کو پڑتا ہے محبت آنکھیں کرتی ہیں، تڑپنا دل کو پڑتا ہے

آگ سورج میں ہوتی ہے، جلنا زمین کو پڑتا ہے
محبت آنکھیں کرتی ہیں، تڑپنا دل کو پڑتا ہے

Aag suraj mein hoti hai, jalna zameen ko padta hai,
Muhabbat Aankhein karti hai, tarapna dil ko parta hai.

مختصر وضاحت

 آگ سورج میں پیدا ہوتی ہے، لیکن اس کا اثر زمین پر پڑتا ہے۔ اسی طرح، محبت آنکھوں میں ہوتی ہے، لیکن اس کا اثر دل پر پڑتا ہے۔

اسی طرح محبت آنکھیں کرتی ہیں، تڑپنا دل کو پڑتا ہے۔ کا مطلب یہ ہے کہ محبت آنکھوں سے   شروع ہوتی ہے،ہم کسی کو دیکھتے ہیں اور ہماری آنکھیں اس کی طرف متوجہ ہوتی ہیں۔ یہ کشش محبت کا آغاز ہے۔ 

جذباتی طور پر، محبت دل کو متاثر کرتی ہے۔ جب ہم کسی سے محبت کرتے ہیں، تو ہمارا دل خوشی اور مسرت سے بھر جاتا ہے۔ لیکن جب محبت ناکام ہو جاتی ہے، تو ہمارا دل درد اور غم سے ٹوٹ جاتا ہے۔

 محبت ایک ایسا جذبہ ہے جو ہماری زندگیوں کو بہت سے طریقوں سے متاثر کرتا ہے۔ یہ ہمیں خوشی اور غم دونوں دے سکتا ہے۔

شور نہ کر دھڑکن ذرا، تھم جا کچھ پل کے لئے بڑی مشکل سے میری آنکھوں میں اُسکا خواب آیا ہے

شور نہ کر دھڑکن ذرا، تھم جا کچھ پل کے لئے
بڑی مشکل سے میری آنکھوں میں اُسکا خواب آیا ہے

Shor na kar dharkan zara, tham ja kuch pal ke liye,
Bari mushkil se meri aankhon mein uska khwaab aaya hai

میں تا عمر جِن کو کوئی دے نہ سکا جواب وہ ایک نظر میں ہزاروں سوالات کر گئے

میں تا عمر جِن کو کوئی دے نہ سکا جواب
وہ ایک نظر میں ہزاروں سوالات کر گئے

Main ta umr jinko koi de na saka jawab,
Woh aik nazar mein hazaron sawalat kar gaye

بغیر پوچھے ہی سلجھ جاتی ہیں سوالوں کی گٹھیاں کچھ آنکھیں اتنی حاضر جواب ہوتی ہیں

بغیر پوچھے ہی سلجھ جاتی ہیں سوالوں کی گٹھیاں
کچھ آنکھیں اتنی حاضر جواب ہوتی ہیں

Bagair pochay hi sulajh jaati hain sawalon ki gutthiyan
Kuch aankhein itni haazir-jawab hoti hain

کسی نے دھول کیا جھونکی آنکھوں میں پہلے سے بہتر دکھنے لگا ہمیں

کسی نے دھول کیا جھونکی آنکھوں میں
پہلے سے بہتر دکھنے لگا ہمیں

Kisi ne dhool kya jhonki aankhon mein,
Pehle se behtar dikhne laga humein

تیری آنکھوں کا کچھ قصور نہیں ہاں مجھی کو خراب ہونا تھا

تیری آنکھوں کا کچھ قصور نہیں
ہاں مجھی کو خراب ہونا تھا

Teri ankhon ka kuchh qasur nahi
Haan mujhi ko kharab hona tha

مختصر وضاحت

 ایک شخص جو محبت میں گرفتار ہے۔ وہ اپنے محبوب کی آنکھوں کی خوبصورتی اور اپنی محبت کی شدت کا اظہار کر رہا ہے۔

اس کا محبوب اس کی تباہی کے لیے ذمہ دار نہیں ہے۔ وہ اپنی محبت کی وجہ سے خود ہی تباہ ہو رہا ہے۔اس کی تباہی اس کی قسمت میں لکھی تھی۔ وہ اپنی محبت سے بچ نہیں سکتا تھا۔

ہمیں خود کو اور اپنے عیبوں کو قبول کرنے کی صلاحیت ہونی چاہیے فرد اپنے ذاتی خوابوں کی تلاش میں اپنی آنکھوں کے راستے کو دیکھ رہا ہے۔ 

وہ معمول کی روٹین سے الگ ہونا چاہتا ہے اور اپنے عملی اور روحانی مقاصد کو حقیقت میں تبدیل کرنا چاہتا ہے۔

Also Read: 40 Sad Urdu Poetry About Love & Life With Images (Sad Shayari in Urdu)

کبھی کبھی تو چھلک پڑتی ہیں یوں ہی آنکھیں اداس ہونے کا کوئی سبب نہیں ہوتا

کبھی کبھی تو چھلک پڑتی ہیں یوں ہی آنکھیں
اداس ہونے کا کوئی سبب نہیں ہوتا

Kabhi kabhi to chhalak parti hain yunhi ankhain
Udaas hone ka koi sabab nahi hota

اک حسیں آنکھ کے اشارے پر قافلے راہ بھول جاتے ہیں

اک حسیں آنکھ کے اشارے پر
قافلے راہ بھول جاتے ہیں

Ik hasin aankh ke ishare par
Qaflay raah bhul jaate hain

آنکھ سے آنکھ جب نہیں ملتی دل سے دل ہم کلام ہوتا ہے

آنکھ سے آنکھ جب نہیں ملتی
دل سے دل ہم کلام ہوتا ہے

Aankh se aankh jab nahi milti
Dil se dil ham-kalam hota hai

لوگ نظروں کو بھی پڑھ لیتے ہیں اپنی آنکھوں کو جھکائے رکھنا

لوگ نظروں کو بھی پڑھ لیتے ہیں
اپنی آنکھوں کو جھکائے رکھنا

Log nazron ko bhi parh lete hain
Apni ankhon ko jhukae rakhna

جب ترے نین مسکراتے ہیں زیست کے رنج بھول جاتے ہیں

جب ترے نین مسکراتے ہیں
زیست کے رنج بھول جاتے ہیں

Jab tere nain muskurate hain
Zeest ke ranj bhol jaate hain

مختصر وضاحت

نین فارسی کا لفظ ہے جس کا مطلب ہے “آنکھیں” جب محبوب کی آنکھیں مسکراتی ہیں، تو عاشق زندگی کے تمام غموں کو بھول جاتا ہے۔ محبوب کی مسکراہٹ اس کے لیے بہت خوشی اور سکون کا باعث بنتی ہے۔

نین آنکھوں کے لیے ایک شاعرانہ لفظ ہے۔ جب ہم کسی سے محبت کرتے ہیں، تو اس کی خوشی ہماری خوشی بن جاتی ہے۔ اس کی مسکراہٹ ہمارے چہروں پر مسکراہٹ لے آتی ہے۔

محبوب کی آنکھوں کی خوبصورتی اور ان کے مسکرانے کا اثر اتنا طاقتور ہے کہ یہ عاشق کو زندگی کے تمام غموں اور پریشانیوں کو بھولنے پر مجبور کر دیتا ہے۔

محبوب کی آنکھوں کی مسکراہٹ اس کے لیے ایک بہت بڑی خوشی اور سکون کا ذریعہ ہے۔

اب تک مری یادوں سے مٹائے نہیں مٹتا بھیگی ہوئی اک شام کا منظر تری آنکھیں

اب تک مری یادوں سے مٹائے نہیں مٹتا
بھیگی ہوئی اک شام کا منظر تری آنکھیں

Ab tak meri yadon se mitae nahi mitta
Bhigi hui ik shaam ka manzar teri ankhain

ہاں کبھی خواب عشق دیکھا تھا اب تک آنکھوں سے خوں ٹپکتا ہے

ہاں کبھی خواب عشق دیکھا تھا
اب تک آنکھوں سے خوں ٹپکتا ہے

Haan kabhi khvab-e-ishq dekha tha
Ab tak ankhon se khuun tapakta hai

اداس آنکھوں سے آنسو نہیں نکلتے ہیں یہ موتیوں کی طرح سیپیوں میں پلتے ہیں

اداس آنکھوں سے آنسو نہیں نکلتے ہیں
یہ موتیوں کی طرح سیپیوں میں پلتے ہیں

Udaas ankhon se aansu nahi nikalte hain
Ye motiyon ki tarah sipiyon mein palte hain

وہ پوچھتا تھا مری آنکھ بھیگنے کا سبب مجھے بہانہ بنانا بھی تو نہیں آیا

وہ پوچھتا تھا مری آنکھ بھیگنے کا سبب
مجھے بہانہ بنانا بھی تو نہیں آیا

Wo poochta tha meri aankh bheegne ka sabab
Mujhe bahanah banana bhi to nahi aya

آنکھ میں اجڑے گھرانے تو نہیں رکھ سکتی میں یہاں خواب پُرانے تو نہیں رکھ سکتی

آنکھ میں اجڑے گھرانے تو نہیں رکھ سکتی
میں یہاں خواب پُرانے تو نہیں رکھ سکتی

Ankh main ujray gharany to nahi rakh sakti
Main yahn khawab purany to nahi rakh sakti

مختصر وضاحت

آنکھ میں اجڑے گھرانے تو نہیں رکھ سکتی۔ کا مطلب ہے کہ وہ اپنے ماضی کے دکھوں اور تکلیفوں کو اپنے ساتھ نہیں لے جا سکتا۔ وہ اپنے ماضی کے منفی تجربات کو اپنے مستقبل میں نہیں لانا چاہتا۔

“میں یہاں خواب پُرانے تو نہیں رکھ سکتی۔” کا مطلب ہے کہ وہ اپنے ماضی کے خوابوں اور امیدوں کو اپنے ساتھ نہیں لے جا سکتا۔ وہ جانتا ہے کہ وہ اپنے ماضی میں نہیں رہ سکتا، اور اسے اپنے مستقبل کے لیے نئے خواب اور امیدیں تلاش کرنی ہوں گی۔

شاعر نے اپنے ماضی میں اتنا زیادہ غم اور دکھ دیکھا ہے کہ اس نے اب امید کھو دی ہے۔ وہ اب اپنے پرانے خوابوں اور خواہشات کو نہیں رکھ سکتا، کیونکہ وہ جانتا ہے کہ وہ انہیں کبھی پورا نہیں کر سکے گا۔

شاعر کا پیغام یہ ہے کہ ماضی ہمیشہ ہمارے ساتھ رہتا ہے۔ ہم اسے بھول سکتے ہیں، لیکن یہ ہمارے اندر گہرائیوں میں چھپا رہتا ہے۔ یہ ہمارے خیالات، جذبات اور اعمال کو متاثر کرتا ہے۔

راستہ بتاتے ہیں مگر آنکھوں پہ پٹی باندھ کر کچھ ہمسفر کرتے ہیں یوں بھی حوصلہ افزائیاں

راستہ بتاتے ہیں مگر آنکھوں پہ پٹی باندھ کر
کچھ ہمسفر کرتے ہیں یوں بھی حوصلہ افزائیاں

Rasta batate hain magar aankhon pe pati bandh kar
Kuch hamsafar karte hain yun bhi hausla afzaaiyaan

Conclusion

In this post, poetry for eyes in urdu has beautifully covered the way eyes express so many of our emotions.

From the sadness of lost love to the hopeful new beginning, poetry on eyes in Urdu has the ability to paint a clear picture with just a few words.

This post also shows us that even the most complex emotions can be captured in the simplest and most elegant words in as little as 2 lines poetry on eyes in urdu.

Let us try to understand the feelings and emotions of our close ones by reading their eyes because eyes speak the truth that words often can’t describe.

Similar Posts